زبان تبدیل کریں
قرآن میں محکم اور متشابہ سے کیا مراد ھے؟ دیکھیں
قرآن میں محکم اور متشابہ سے کیا مراد ھے؟

جیسا کہ ھم سورہ آل عمران میں پڑھتے ھیں: < ہُوَ الَّذِی اٴَنْزَلَ عَلَیْکَ الْکِتَابَ مِنْہُ آیَاتٌ مُحْکَمَاتٌ ہُنَّ اٴُمُّ الْکِتَابِ

قرآن مجید کو کب ترتیب دیا گیا؟ دیکھیں
قرآن مجید کو کب ترتیب دیا گیا؟

جیسا کہ ھم جانتے ھیں کہ قرآن مجید کے پھلے سورے کا نام ”فاتحة الکتاب“ ھے، ”فاتحة الکتاب“ یعنی کتاب (قرآن) کی ابتدا اور پیغمبر اکرم(ص) سے منقول

قرآن کے حروف مقطّعات سے کیا مراد ھے؟ دیکھیں
قرآن کے حروف مقطّعات سے کیا مراد ھے؟

قرآن مجید کے ۲۹ سوروں کے شروع میں حروف مقطّعات آئے ھیں، اور جیسا کہ ان کے نام سے ظاھر ھے کہ یہ الگ الگ حروف ھیں اور ایک دوسرے سے جدا دکھائی دیتے

قرآن کی مثل کیسے نہ لاسکے؟ دیکھیں
قرآن کی مثل کیسے نہ لاسکے؟

جیسا کہ ھم سورہ بقرہ میں پڑھتے ھیں: < وَإِنْ کُنتُمْ فِی رَیْبٍ مِمَّا نَزَّلْنَا عَلَی عَبْدِنَا فَاٴْتُوا بِسُورَةٍ مِنْ مِثْلِہِ ۔۔۔>

کیا قرآن کا اعجاز صرف فصاحت و بلاغت میں منحصر ھے؟ دیکھیں
کیا قرآن کا اعجاز صرف فصاحت و بلاغت میں منحصر ھے؟

اس میں کوئی شک نھیں ھے کہ قرآن مجید کا اعجاز صرف فصاحت و بلاغت اور شیریں بیانی سے مخصوص نھیں ھے (جیسا کہ بعض قدیم مفسرین کا نظریہ ھے) بلکہ اس کے

کیا قرآن مجید میں تحریف ھوئی ھے؟ دیکھیں
کیا قرآن مجید میں تحریف ھوئی ھے؟

شیعہ وسنی علما کے یھاں مشھور و معروف یھی ھے کہ قرآن مجید میں کوئی تحریف نھیں ھوئی ھے، اور موجودہ قرآن کریم وھی قرآن ھے جو پیغمبر اکرم(ص) پر نازل

قرآن شریف و روایات کے ظاھر پر عمل کرنا اور تاویل کی مخالفت[1] دیکھیں
قرآن شریف و روایات کے ظاھر پر عمل کرنا اور تاویل کی مخالفت[1]

ابن تیمیہ، جس کے نظریات اور فتووں پر وھابیوں کی بنیاد رکھی گئی ھے کھتے ھیں: تمام لوگوں پر خدا اور اس کے رسول کے کلام کو اصل قرار دینا اور اس کی

آیات قرآنی، آب حیات ہیں دیکھیں
آیات قرآنی، آب حیات ہیں

جب انسان قرآن سے مانوس ہو جائے گا تو زندگی و معاشرے کے گوناگوں امور میں قرآن کی بات پر توجہ دے گا۔ اچھی آواز(تلاوت) قرآن کو شیریں تر بنا دیتی ہے

کاپی هوچکا
مہربانی فرما کر پہلے لاگ ان کریں